sad babyزندگی کتنی پریشان ہے ناداروں کی
ظلم کے ہاتھ گریباں سے چمٹ جاتے ہیں

وسعتیں دیکھ کے مرمر کے حسیں بنگلوں کی
اپنی بوسیدہ سی چادر میں سمٹ جاتے ہیں