اوکاڑہ( بیورورپورٹ) ڈسڑکٹ پولیس آفیسرمحمدفیصل رانا نے ایس پی انویسٹی گیشن امیر سعود مگسی اورسب ڈویژنل پولیس افسران اور ایس ایچ اوز سے طیب سعید شہید پولیس لائن میں کرائم کے حوالے سے میٹنگ کی ۔جس میں ضلع بھر میں ہونے والے کرائم کا جائزہ لیا گیاڈسڑکٹ پولیس آفیسرمحمدفیصل رانانے کہاکہ حکومت پنجاب نے پولیس کو مجرمان کے ڈیٹاسے متعلق جدید ٹیکنالو جی سے آراستہ کیا ہے آپ ٹیکنالوجی سے فائدہ اُٹھائیں۔ انچارج انویسٹی گیشن بی ڈویژن کی سخت سرزنش کی۔ انہوں نے مزید کہا اب وہ ہی افسر رہے گا جو نیک نیتی اور ایماندار ی سے لوگوں کی خدمت کرے گا ۔کرپٹ اور کام چوروں کی محکمے میں کوئی جگہ نہیں ہے ۔ڈی پی او اوکاڑہ محمدفیصل رانا نے سختی سے سب ڈویژنل پولیس افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ دیہاتوں میں ٹھکری پہرہ کو مزید فعال بنائیں اور مویشی چوری ہرگز برادشت نہیں کی جائے گی انہوں نے کہا عید الاضحی قریب ہے مویشی منڈیوں میں نوسربازوں اور شرپسند وں بندوں پر کڑی نظر رکھی جائے ۔کرائم میٹنگ کرتے ہوئے کہا کہ ایس ایچ اوز کا فرض ہے کہ وہ اپنے اپنے علاقہ میں جہاں کرائم ہوتا ہے وہاں پر اُ س کی روک تھام کے لیے سخت اور بروقت کارروائی عمل میں لائیں۔تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی ،بینکوں اور ڈاکخانے کی سیکورٹی ڈیوٹی کو روزانہ کی بنیاد پر چیک کیا جائے اور متعلق پولیس اسٹیشن کی گاڑیاں متواتر گشت کریں اور کسی بھی ناگہانی صورت حال سے نمٹنے کے ہمہ وقت الرٹ رہیں ملک پاکستان حالات جنگ میں ہیں اس وجہ سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ساتھ پولیس فورس پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے فرائض احسن طریقہ سے انجام دے ۔نیشنل ایکشن پلان کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر ضلع اوکاڑہ میں سختی سے عمل کیا جارہا ہے اور آئندہ بھی سو فیصد عملدآمد کیا جائے گا ۔نیشنل ایکشن پلان پر کسی بھی قسم کاکوئی سمجھوتہ نہ ہوگا۔ عید الاضحی تک تمام افسران وملازمین کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئی ہیں ۔عید الاضحی کی نماز پر تعینات اہلکار اُ س وقت تک اپنی ڈیوٹی نہیں چھوڑیں گے جب تک آخری نمازی چلا نہ جائے ڈی پی او اوکاڑہ محمدفیصل رانا نے کہا کہ ڈیوٹی کے دوران کسی بھی قسم کی غفلت لاپرواہی ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی اگر دوران ڈیوٹی کوئی افسریا اہلکار نے سستی کامظاہر ہ کیا تو اس کے خلاف سخت محکمانہ ایکشن لیا جائے گا۔ اس موقع پر ڈی پی او فیصل رانا نے تمام ایس ڈی پی او زاور ایس ایچ اوز کو آئی جی پنجاب کے احکامات سے بھی آگاہ کیا*