لاہور(پ ر) پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن (پنجاب) کے چےئرمین ریاض اللہ خان اور گروپ لیڈر عاصم رضا نے کہا ہے کہ گندم / آٹا کے ایکسپورٹرکو ریبیٹ کی ادائیگیوں میں تاخیر سے برآمد کا عمل متاثر ہوگا، وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف اور وزیر اعلی پنجاب میاں محمد شہباز شریف خصوصی دلچسپی لے کر ریبیٹ کی رقم کی ادائیگیاں کروائیں ،گندم / آٹا کے ایکسپورٹر لاکھوں ٹن گندم ایکسپورٹ کر چکے ہیں تا حال انہیں ریبیٹ کی رقم میں سے ایک پائی تک نہیں مل سکی،جس کی وجہ سے فلور ملز مالکان شدید پریشانی سے دوچار ہیں ۔ پی ایف ایم اے کے رہنما عاصم رضا نے کہا کہ گندم کی نئی فصل آنے والی ہے جبکہ ابھی تک پچھلے تین سالوں کی پڑی پرانی گندم خراب ہو رہی ہے اور اس کا نکاس ممکن نہیں بنایا جا سکا، جبکہ پنجاب اور سندھ سے گندم / آٹا ایکسپورٹ کی مد میں ملنے والی ریبیٹ کی رقم کی ادائیگیاں بھی نہیں کی گئیں جس کی وجہ سے ایکسپورٹر حضرات شدید مالی دباؤ کا شکار ہیں ،میاں ریاض ، لیاقت علی خان اور سابق چےئرمین پی ایف ایم اے چوہدری افتخار احمد مٹو نے کہا کہ حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے اربوں ر وپے مالیت کی لاکھوں ٹن گندم کھلے آسمان تلے اوپن گنجیوں میں پڑی خراب ہو رہی ہے اور محکمہ خوراک ناقص گندم اٹھانے پر مجبور کر رہا ہے جو سراسر عوام الناس کے ساتھ زیادتی کے مترادف ہے حالانکہ بروقت گندم کے نکاس سے لاکھوں ٹن گندم کو خراب ہونے سے بچایا جا سکتا ہے تاہم حکومت کی جانب سے اس جانب کوئی خاص توجہ نہیں دی جا رہی ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو بڑی سنجیدگی کے ساتھ فاضل گندم کی نکاسی کیلئے فوری اقدامات کرنا ہونگے تاکہ آنے والی فصل کیلئے گوداموں میں جگہ بنائی جا سکے تاہم اس سے قبل گندم کے ایکسپورٹرز کو ریبیٹ کی رقم کی ادائیگی یقینی بنانے کی ضرورت ہے تاکہ ایکسپورٹرز اور حکومت کے درمیان اعتماد سازی پیدا ہو سکے۔