پاکستان لڑکیوں کی تعلیم کے حوالے سے یونیسکو کی مکمل حمایت کرتا ہے 

پیرس 10 اپریل:2019 حکومت پاکستان یونیسکو کی تعلیمی مقاصد کے مطابق تمام سکول جانے والے بچوں کیلئے تعلیمی معیار اور خصوصی طور پر لڑکیوں کے سکولوں میں داخلے کے حوالے سے ٹھوس اقدامات کر رہی ہے۔ 

 محترمہ وجیہہ اکرم پارلیمانی سیکرٹری برائے تعلیم و پروفیشنل ٹریننگ اور پاکستان کی جانب سے یونیسکو ایگزیگٹیو بورڈ کی نئی نمائندہ نے یہ بات یونیسکو ہیڈکوارٹر پیرس میں جاری یونیسکو ایگزیکٹیو بورڈ کے 206 ویں اجلاس میں کل کہی۔ 

جناب معین الحق سفیر پاکستان اور پاکستان کی جانب سے یونیسکو کے مستقل مندوب نے بھی اس اجلاس میں شرکت کی۔

محترمہ وجیہہ اکرم نے کہا کہ پاکستان میں خواتین قومی و بین الاقوامی امور میں ہمیشہ سے آگے رہی ہیں اور ان کی اس اہم جگہ تعیناتی پاکستان میں خواتین کی اہمیت کا واضح ثبوت ہے۔ 

محترمہ وجیہہ نے مزیدکہا کہ یونیسکو میں بنائے گئے ملالہ فنڈ برائے لڑکیوں کی تعلیم میں پاکستان کی جانب سے عطیہ کردہ 10 ملین ڈالر پاکستان سمیت ایشیا اور افریقہ کے دیگر ممالک میں ہزاروں لڑکیوں کی تعلیمی معیار میں مثبت تبدیلی لائے گا۔

محترمہ وجیہہ نے ایگزیگٹیو بورڈ کے اراکین کو بتایا کہ موجودہ حکومت پاکستان کو پرامن، خوشحال اور ترقی یافتہ بنانے کا نقطہ نظر رکھتی ہے۔ انہوں نے مزیدکہا کہ حکومت کی نئی اصلاحاتی پروگراموں میں اچھی طرز حکمرانی، معاشی بحالی، غربت کا خاتمہ، ثقافتی ورثے کو محفوظ کرنا اور ماحول کا تحفظ شامل ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ دنیا کے کئی حصے تنازعات کا سامنا کر رہے ہیں۔ جس کی وجہ سے پوری دنیا کے امن کو خطرہ لاحق ہے جبکہ اس کی وجہ سے ثقافتی ورثے اور ماحولیات کو بھی خطرات ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ یہ یونیسکو کے ممبران کی مشترکہ ذمہ داری ہے کہ وہ بین الاقوامی امن اور استحکام کیلئے مل کر کام کریں۔