IMG-20160721-WA0050IMG-20160721-WA0047IMG-20160722-WA0036IMG-20160722-WA0054IMG-20160722-WA0014IMG-20160722-WA002720160721_22365620160721_22271220160721_22192520160721_22091520160721_22095320160721_22103920160721_22102020160721_220939IMG-20160722-WA0027IMG-20160722-WA0021مسقط – چوہدری شاہد اقبال راں کے ڈیرے غلا صنایئہ میں فخر پاکستان مرحوم عبدالستار ایدھی، معروف بابائے نعت خواں سید منظورالکوننین شاه ، عمر فاروق اقبال شاه کهگہ اور والی بال کهلاڑی شیراز احمد کے ایصال ثواب کیلئے تعزیتی محفل و دعائے مغفرت کی گئی.

مسقط  (رپورٹ – ڈاکٹر میاں ندیم انور سے ) مسقط میں مقیم کاروباری شخصیت چوہدری شاہد اقبال راں کی طرف ان کے ڈیرے غلا صنایئہ نزد المدینہ ہالیڈے ان ہوٹل مسقط میں گزشتہ روز فخر پاکستان مرحوم عبدالستار ایدھی، معروف بابائے نعت خواں سید منظورالکوننین شاه، پاکستانی سفارتخانہ مسقط کے عمر فاروق اقبال شاه کهگہ اور والی بال کهلاڑی شیراز احمد کے ایصال ثواب کیلئے تعزیتی محفل و دعائے مغفرت کا اہتمام کیا گیا. جس میں پاکستان سوشل کلب عمان کے  سابق چیئرمین سعید خان ، سابق سیکرٹری جنرل سیدزاده سخاوت بخاری، پاکستان سکول مسقط کے بورڈز آف ڈائریکٹرز کے ممبر محمد عثمان لکهن،  ثناخواں غلام مرتضی قادری، مہر محمد یوسف، ڈاکٹر میاں ندیم انور، سلیم چوہدری، چوھدری شاہد اقبال راں، چوھدری محمد اقبال اور دیگر اوورسیز پاکستانی کمیونٹی کے افراد نے بهی شرکت کی.

شرکاء کی طرف سے مرحومین کے لیے تعزیتی محفل کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا. حافظ محمد مختار نے تلاوت قرآن پاک اور نعت رسول مقبول سید ظفر علی شاہ رضوی اور معروف ثناخواں غلام مرتضی قادری نے بارگاہ رسالت مآب میں ہدیہ عقیدت کے پھول نچھاور کیے. جبکہ دعائے مغفرت مہر محمد یوسف نے کروائی. اس موقع پر شرکاء نے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ معروف سماجی شخصیت مرحوم عبدالستار ایدھی کی وفات ملک و قوم کے لئے بہت بڑا نقصان ہے. وہ پاکستان کا سرمایہ تهے. ان کی خدمات کو کبھی بھی فراموش نہی کیا جا سکتا ہے. انہوں نے اپنی تمام تر زندگی خدمت انسانیت میں گزاری اور ان کی زندگی ہمارے لیے مشعل راہ ہے. عبدالستار ایدھی پوری دنیا میں پاکستان کی پہچان اور اسلام کا حقیقی چہرہ تهے. ان کی خدمات کا دائرہ کار عالمی سطح پر اور مذہبی، مسلکی اور لسانی تفریق سے بلند تها. وه ہر لمحہ انسانیت کی خدمت میں مصروف عمل رہتے تھے اور وه آسمانی خدمت کا عظیم ستارہ تهے جو کہ ڈوب کر بهی ساری دنیا کو روشن و تابندہ کر گئے. اس کی تازہ مثال وہ جہان فانی سے رخصت ہوتے ہوئے اپنی آنکھیں بھی عطیہ کر گئے اس سے بڑی اور کیا انسانی خدمت ہو سکتی ہے.

ان کی وفات سے دکهی انسانیت یتیم ہو گئ ہے. اور انکے خلا کو پر کرنا بہت مشکل ہوگا. ان جیسی شخصیت صدیوں بعد پیدا ہوتی ہے. پوری دنیا کے ہیرو تهے اور انکی خدمات کو کو تاحیات یاد رکها جائے گا.

اللہ تعالٰی مرحومین سید منظور الکونین شاه، عمر فاروق اقبال شاه کهگہ اور والی بال کهلاڑی شیراز احمد کے درجات کو بلند کرے  اور جوارح رحمت میں جگہ دے. اور ان کے پسماندگان و لواحقین کو بھی صبر و جمیل عطا کرے. آمین ثم آمین.