358277_21946270کوئٹہ:  پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے سانحہ کوئٹہ کے زخمیوں کی سول اسپتال میں عیادت کی۔ زخمیوں کی عیادت کے بعد سول اسپتال کے باہر میڈٰیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ سانحہ کوئٹہ میں سیکورٹی لیپس کیسے ہوا اس تحقیقات کی جائیں۔ بلوچستان میں سیکورٹی ناقص کیوں ہے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان ناقص سیکورٹی انتظامات کا جواب دیں جبکہ وزیراعظم کو سیکورٹی انتظامات پر زیادہ توجہ دینی چاہیئے۔ بلوچستان میں سیکورٹی پر 30 ارب خرچ ہوتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا 2 نومبر پاکستان کی تاریخ کا فیصلہ کن دن ہے اور یہ دن نئے پاکستان کا فیصلہ کرے گا۔ واضح رہے عمران خان ایبٹ آباد کا دورہ منسوخ کر کے کوئٹہ پہنچے تھے۔ کوئٹہ روانگی سے قبل اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کرپشن کے ذریعے دہشت گردوں کی فنڈنگ ہو رہی ہے اور وزیر اعظم اپنی ذات کو بچانے میں لگے ہیں۔ چئیرمین تحریک انصاف نے کوئٹہ میں دہشتگردی کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ سارا پاکستان کوئٹہ کے عوام کے ساتھ ہے۔ نواز شریف نے اقوام متحدہ میں بلوچستان میں بھارتی مداخلت کا معاملہ اٹھایا نہ کلبھوشن یادو پر بات کی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارت فوجی قوت سے ایٹمی ریاست پاکستان کو ختم نہیں کر سکتا۔