111واشنگٹن: (ویب ڈیسک) غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق داعش نے اردن کے مغوی پائلٹ کو زندہ جلا دیا، اور اس کی وڈیو بھی جاری کی گئی ہے۔ ویڈیو کی فوری طور پر تصدیق نہیں ہوئی تاہم اس میں لوہے کا ایک پنجرہ شعلوں میں لپٹا نظر آ رہا ہے جس کے اندر نارنجی رنگ کے کپڑے پہنے ہوئے ایک شخص بھی ہے جس کے بارے میں داعش کا دعویٰ ہے کہ وہ اردن کا پائلٹ معاذ تھا۔ معاذ کو گزشتہ سال دسمبر میں اس وقت داعش نے حراست میں لیا جب وہ امریکی قیادت میں جاری فضائی کارروائی میں شامل تھا اور اس کا جہاز گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ داعش نے معاذ کی رہائی کے بدلے اردن میں قید القاعدہ سے تعلق رکھنے والی ایک عراقی خاتون جنگجو کی رہائی کا مطالبہ کیا تھا۔ اردن خاتون کو رہا کرنے پر رضامند تھا مگر حکومت نے اپنے پائلٹ کے زندہ ہونے کا ثبوت مانگا تھا۔ دوسری جانب اردن کے شاہ عبداللہ نے واشنگٹن میں امریکی سینیٹرز سے ملاقات کی اور صورت حال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔ اردن کے حکومتی ترجمان کے مطابق اپنے پائلٹ کا انتقام لینے کے لئے زمین ہلا دینے والا جواب دیں گے۔ ادھر امریکی صدر باراک اوباما نے کہا داعش کو شکست دینے کے لئے اپنے اتحادیوں کے ہمراہ کوششوں کو مزید تیز کریں گے۔ ادھر اردن نے شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے ہاتھوں اپنے پائلٹ کی ہلاکت کے بعد ایک خاتون سمیت دو مجرموں کو پھانسی دے دی ہے۔ سزائے موت پانے والوں میں ساجدہ الرشاوی شامل ہیں جن کی رہائی کا مطالبہ دولت اسلامیہ نے کیا تھا۔ حکام کا کہنا ہے کہ ساجدہ الرشاوی اور عراق میں القاعدہ کے رہنماء زیاد کربولی کو بدھ کی صبح سزائے موت دی گئی۔ اس سے پہلے اردن نے اپنے مغوی پائلٹ کے ہلاک ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پائلٹ کو ایک ماہ پہلے ہی ہلاک کر دیا گیا تھا۔