ابوظہبی(اسپورٹس ڈیسک)قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے پاکستانی کھلاڑیوں کو وارننگ دے دی ہے کہ وہ جیسن ہولڈر کی ٹیم کی جانب سے پلٹ کر وار کرنے کی کوشش سے ہوشیار رہیں،دبئی ٹیسٹ میں سخت مزاحمت کے پیش نظر ویسٹ انڈیز کا کڑا چیلنج متوقع ہے ،کسی بھی قسم کی کوتاہی سے گریز کرنا ہوگا۔تفصیلات کے مطابق قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے پہلے ٹیسٹ میچ میں ویسٹ انڈین ٹیم کی جانب سے عمدہ کم بیک کے بعد اپنے کھلاڑیوں خبردار کیا ہے کہ وہ حریف ٹیم کو آسان نہ سمجھیں کیونکہ وہ پلٹ کر وار کرنے کی پوری اہلیت رکھتی ہے ۔ شیخ زید اسٹیڈیم میں قومی ٹیم کے پریکٹس سیشن کے بعد مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ پہلے ٹیسٹ میں جس انداز سے کیریبین کھلاڑیوں نے کم بیک کیا اس کو دیکھ کر وہ بہت زیادہ متاثر ہوئے خاص کر ڈیرن براوو تو بہت عمدگی سے کھیلے لہٰذا دوسرے ٹیسٹ میں پاکستانی کھلاڑیوں کو بہترین کھیل پیش کرنا ہوگا کیونکہ ویسٹ انڈین ٹیم پوری تیاری کے ساتھ سیریز میں واپسی کی کوشش کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی ٹیم نے پہلے ٹیسٹ میں خود ہی ویسٹ انڈیز کو کھیل میں واپسی کا موقع فراہم کیا اور انہیں پاکستانی ٹیم کی دوسری اننگز میں بیٹنگ کو دیکھ کر بہت زیادہ مایوسی ہوئی تھی لیکن بعض اوقات ایسی چیزیں سیکھنے کے اعتبار سے بہت اچھی ثابت ہوتی ہیں اور اس بات کو یقینی بنایا جاتا ہے کہ اس طرح کے حالات دوبارہ پیش نہ آئیں۔ مکی آرتھر نے پاکستانی ٹیم کی پیشقدمی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ان کے کھلاڑی اسی انداز سے سیکھتے ہوئے آگے بڑھتے رہے تو یہ بہت اچھی بات ہو گی۔ ہیڈ کوچ کا کہنا تھا کہ کارڈف کے ون ڈے میچ سے اب تک ان کی ٹیم دس میچز میں کامیابی حاصل کر چکی ہے اور اس میں اوول فتح بھی شامل کر لی جائے تو تینوں فارمیٹس میں کارکردگی باعث اطمینان ہے ۔