جرمنی (اردو لائن نیوز ) جرمنی میں جذبہ حب الوطنی کے تحت قائم ہونے والی تنظیم ہم ہیں پاکستان نے ہر سال طرح امسال بھی جشن آزادی 14اگست 2018 کی تقریبات میں نہایت جوش اور ولولہ کے ساتھ بھرپور انداز میں شرکت کی تقریب کا انعقاد صبح ساڑھے گیارہ بجے فرینکفرٹ میں پاکستانی قونصل خانہ کے احاطہ میں ہوا۔تلاوت قرآن کریم کے بعد اجتماعی طور پر قومی ترانہ بلند آواز میں پڑھا گیا۔ اسکے بعد جرمنی میں پاکستان کے قونصلر جنرل جناب ندیم احمد صاحب نے پرچم کشائی کا فریضہ انجام دیا اور قونصل خانہ کا احاطہ پر شگاف نعروں سے گونج اٹھا ،پرچم کشائی کے بعد جناب ندیم صاحب نے نہایت پر اثر انداز اپنی تقریر کا آغاز شر اکاکو آزادی کی مبارکباد اور خاص طور سے نئے دور کے آغاز کا اظہار بہت مثبت انداز میں کیا۔۔انہوں نے کہا کہ ز ندہ قومیں یوم آزادی جوش وخروش سے مناتی ہیں،ہمیں شہداء کی لازوال قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھنا چاہیے، ہمارا ملک قدرت کا عظیم تحفہ ہے ہم نے اس کی حفاظت کرنی ہے ہمیں اپنے شہداء کی لازوال قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھنا چاہیے’جنہوں نے ملک کی آزادی اور حفاظ کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ،تقریر کے آخری حصہ میں شراکا سے پاکستان میں پانی کی کمی اور ڈیم کی ضرورت کا زکر کیا اور لوگوں سے چیف جسٹس کے قائم کردہ ڈیم فنڈ میں دل کھول کر فنڈ دینے کی اپیل کی ۔بعد ازاں قونصلر صاحب نے بھارت میں پچھلے دو تین سال کے دوران کشمیری مسلمانوں پر بھارتی فوج کی بر بریت اورمظالم کا زکر انتہائی دکھ بھرے انداز میں کیا اور جرمنی میں EU-Pak Friends کی طرف سے یورپ کے 15ممالک میں بیک وقت 15 اگست کو یوم احتجاج کے بارہ میں مطلع کیا۔تقریر کے اختتام پر ملک کی سلامتی کی دعا کی گء اور اسطرح اس تقریب کا اختتام ہوا۔تقریب کے بعد پرتکلف ظہرانہ کا انتظام بھی کیا گیا تھا۔ تقریب میں ہم ہیں پاکستان کی طرف سے محمود سعید ۔محترمہ عائشہ طارق ۔نعیم گجر ۔خواجہ خالد رشید اور اسد اللہ طارق نے شرکت کی ۔